September 7, 2018

طلب چا


لڑکا دراز قامت ہو، صاف رنگت رکھتا ہو، سیگرٹ کا کش لگاتا ہو،سلنسر نکال کر بائیک اڑاتا ہو، رنگین کار کا مالک ہو، میٹھی باتیں کرتا ہو اور سیاہ کافی پینے کا شغف رکھتا ہو تو ایسے لڑکے جنس مخالف میں خاصی مقبولیت حاصل کر لیتےہیں- 
مزید پڑھیے Résuméabuiyad

June 16, 2018

میرے شہر


میں نے زندگی میں اچھی خاصی آوارہ گردی کی ہے اور کئی شہروں میں طویل قیام کیا ہے- ذیل میں ان شہروں اور ان کے بارے میری رائے ہے- بات کسی حد تک عقلیت سے آگے نکلی ہوئی ہے لیکن وہ تعلق ہی کیا جو عقلی بنیادوں پر قائم ہو- 
مزید پڑھیے Résuméabuiyad

April 5, 2018

"ماں بولی"



میں بس اسٹاپ پر پہنچ کر ابھی دم نہ لینے پایا تھا کہ کسی نے دونوں ہاتھوں سے میرا داہنا بازو تھام لیا۔ 

میں نے خود کو پر سکون رکھتے ہوئے اپنی داہنی طرف دیکھا۔ ایک بوڑھی روسی سفید فارم خاتون تھی جن کو روسی زبان میں ببوشکا اور ہمارے ہاں اماں پکارا جاتا ہے۔ اس کا چہرہ دیگر بوڑھی روسی خواتین کی طرح کی طرح عمر بھر کی تنہائی کا غماز تھا۔ خواہشات کا بوجھ ڈھوتے ڈھوتے اس کے چہرے پر جھریاں لٹک آئی تھیں۔ اس کی عمر کم از کم اسی سال رہی ہو گی۔ اس کا جسم تھوڑا چوڑا تھا لیکن ابھی تک وہ اس قابل تھی کہ اپنے پیروں پر کھڑی ہو سکتی تھی- اس روسی اماں نے سرخ رنگ کا اوور کوٹ پہنا تھا جس کی اجڑی ہوئی روئیں کوٹ کے پرانے ہونے کی چغلی کھا رہا تھا۔ کوٹ کا نچلے چند بٹن ٹوٹے ہوا تھا یا اماں بند کرنا بھول گئی تھی۔ اماں کا چہرہ جھریوں سے بھرا تھا۔ وہ کب کی اس عمر میں پہنچ چکی تھی جہاں خواتین کسی بھی قسم کی دِکھنے کی پریشانی سے آزاد ہو چکی ہوتی ہیں۔ اس خاتون کے ہونٹوں پر ہلکے سرخ رنگ کے بال تھے جو اگر غور سے دیکھے جاتے تو اچھی خاصی مونچھیں بن چکے تھے۔ مجھے اس کو دیکھ کر اپنے گاؤں کی بوڑھی خواتین یاد آ گئیں۔ اماں ثرو، اماں سکھی، اماں روزی، جو ہمارے گھر میں کام کیا کرتی تھیں- جب تک میں طبقاتی فرق نہ جانا تھا تب تک ان کے جھریوں بھرے چہرے سے بڑی محبت جھلکا کرتی تھی۔ 
مزید پڑھیے Résuméabuiyad

January 20, 2018

انگریزی لفظ برڈر کی اردو



اب اللہ جانے پیدائشی خلل تھا یا بعد میں کس حادثے کا نتیجہ ہے کہ اردو سے محبت کوٹ کوٹ کر بھری ہوئی ہے- یہ محبت جب کمپیوٹر استعمال کرنا شروع کیا تو مزید ابھر کر سامنے آئی- جس روز پہلی بار نویں جماعت میں کمپیوٹر کو چھوا اسی لمحے پہلا خیال یہی آیا کہ اس پر اردو میں کام کیسے کیا جا سکتا ہے- 
مزید پڑھیے Résuméabuiyad

November 22, 2017

فیس بک فرینڈ ریکوئسٹ کا معمہ


جس وقت میں نے انٹرنیٹ استعمال کرنا شروع کیا تو یہ وہ زمانہ تھا جب قلمی دوستی دم توڑ چکی تھی اور یاہو Yahoo اور ایم ایس ا ین MSNکے غپ خانے (چیٹ رومز chat rooms) آباد ہو چکے تھے- جی میل Gmail اور سوشل میڈیا بنانے والے شاید ابھی سوچنے کے قابل بھی نہ ہوئے تھے۔ 
مزید پڑھیے Résuméabuiyad

August 5, 2017

پی ایچ ڈی 'کیوں' نہ کریں


 دنیا بھر میں پی ایچ ڈی PhD ایک معزز ڈگری سمجھی جاتی ہے- اکادیمیا Academia یعنی تعلیم سے منسلک شعبے میں یہ قابلیت کی معراج سمجھی جاتی ہے- معزز اس تناظر میں کہ یہ ایم بی بی ایس کیے بغیر واحد راستہ ہے جس کے آخیر میں آپ ڈاکٹر کہلانے لگتے ہیں اور معراج اس طرح کہ یہ آخری تعلیمی ڈگری ہے جو حاصل کی جاسکتی ہے- پی ایچ ڈی یعنی ڈاکٹریٹ آف فلاسفی دراصل ایک تحقیقی ڈگری ہے جو آپ کو تب ملتی ہے جب آپ کچھ نیا دنیا کے سامنے لائیں خواہ وہ انسانی زندگی کی بہتری سے متعلق ہو یا کسی مضمون بارے نئی منطق پیش کرے- 
مزید پڑھیے Résuméabuiyad

July 13, 2017

مستقبل



اگر آپ یورپ یا کسی اور ایسے ملک جہاں انصاف اور عام آدمی کی قدر ہے میں رہ کر آئیں تو پاکستان آتے ہی ہر شخص کے انفرادی و اجتماعی افعال دیکھ کر سر پیٹنے کو دل کرتا ہے کہ آخر ہم کہاں جا رہے ہیں؟ پاکستان میں رہنے والے عام طور پر اس شے کو محسوس نہیں کرتے بلکہ کچھ لوگ تو ایسی باتوں کو پاکستان کے خلاف مغربی پراپگنڈہ تک کہہ دیتے ہیں لیکن جب آپ کے پاس تقابل کرنے کو کوئی مقابل موجود ہو تو حقیقت آشکار ہو جاتی ہے- 
مزید پڑھیے Résuméabuiyad

May 18, 2017

نیل کنٹھ کا حملہ


سب سے پہلے یہ جان لیں کہ نیل کنٹھ کوئی خطرناک خلائی مخلوق نہیں بلکہ ایک پرندے کا نام ہے جس کو انگریزی میں Roller کہتے ہیں اور یہ کوئی خوفناک یا سائنسی فکشن خیالی کہانی نہیں بلکہ معصوم سا حقیقی واقعہ ہے-

یوں تو برڈنگ یا پرندے بازی کے دو سال کے دوران ایسے ایسے واقعات پیش آئے کہ سنانے بیٹھوں تو ختم نہ ہوں لیکن چند ایک باتیں یادگار ہیں- 
مزید پڑھیے Résuméabuiyad

April 9, 2017

حجاب کے پانچ رعائتی نمبر



 پنجاب حکومت نے حال ہی میں ایک تجویز پر غور کیا تھا کہ ایسی طالبات کو پانچ نمبر اضافی دیے جائیں جو حجاب پہنیں۔ مزید برآں ایسی طالبات کو حاضری میں بھی پانچ فیصد رعایت دی جائے- تاہم یہ واضح نہیں کہ یہ سہولت ان کو دی جائے گی جو سارا سال حجاب پہنیں گی یا فقط امتحان والے روز پہن کر آئیں گی- سارا سال کے لیے گویا حاضری رجسٹر میں ایک خانہ حجاب کا بھی ڈالنا ہو گا- باقی امتحان والے دن حجاب پہننے سے مجھے وہ لڑکے یاد آگئے جو باریش پروفیسر صاحب سے اچھے نمبر لینے کے لیے باجماعت صف اول میں نماز ادا کرنا شروع کر دیتے تھے- ایک یاد میری ایک پولستانی استانی کی بھی ابھرتی ہے جس نے ایک بار کہا تھا جس دن ہمارا زبانی امتحان ہوا کرتا تھا تو ہم مختصر ترین سکرٹ پہن کر امتحان دینے جایا کرتے تھے۔ 
مزید پڑھیے Résuméabuiyad

March 17, 2017

میرا آڈیو ڈرامہ اور اے دل ہے مشکل فلم میں شاعری


جب میں ماس کمیونیکشن میں ماسٹرز کر رہا تھا تو تب میں نے اور میرے چند دوستوں نے ملکر ایک آڈیو ڈرامہ بنایا تھا جس کو تحریر میں نے کیا تھا- بعد میں ہم نے تین چار کلاسوں میں ڈرامے کو پیش کیا اور اس پر لوگوں کے تاثرات و تنقید سنی اور حتی المقدور جواب دینے کی کوشش کی- اب تنقید تو ایسے ہی تھے کہ آپ کچھ پڑھے بغیر کسی کتاب پر تبصرہ سن کر اس پر تنقید کرنا چالو ہو جائیں کہ آدھے سے زیادہ لوگوں نے کبھی زندگی میں آڈیو یا صوتی ڈرامہ سنا ہی نہیں تھا کجا اس کی تکنیکی خامیاں پکڑنا لیکن آفرین ہے کہ نوے فیصد لوگوں نے کھل کر تنقید کی –

مزید پڑھیے Résuméabuiyad